صاحب کتاب مفاتح الجنان علامہ شیخ عباس قمی سردیوں کے موسم میں مشہد مقدس کی ایک مسجد میں خطاب کیا کرتے تھے 

اس مسجد میں عوام ان کی شخصیت کے سبب دن بہ دن بڑھتی جاررہی تھی یہاں تک کہ ایک دن جب شیخ عباس قمی مسجد میں داخل ہونے جارہے تھے کہ آپ کی نگاہ مسجد میں موجود لوگوں کے جم غفیر پر پڑی اور پھر آپ اس دن مسجد میں خطاب کئے بغیر ہی دروازے سے واپس چلے گئے 

اور اس دن کے بعد آپ نے اس مسجد میں خطاب کرنا بند کردیا 

جب آپ سے اس کی وجہ پوچھی گئی تو آپ فرمانے لگے کہ جس وقت مسجد کے دوازے کا پردہ میں اٹھایا اور میری نظر بڑے اجتما ع پر پڑی میرے اندر ایک قسم کا غرور اور خود پسندی جیسا ملا جلا احساس جاگ اٹھا اور اسی وقت میں نے اس شیطانی احساس کو ختم کرنے کے لئے واپسی کی راہ لی ۔

آج کے غرور وتکبر اور شہرت طلبی کے بازار میں دیندار اور بے دین حتی علما خطبا و واعظین ذاکرین تک تکبر و غرور کا شکار دیکھائی دیتے ہیں مگر یہ کہ اللہ ہم سب کے حال پر رحم کرے ۔

واقعہ کتاب صاحبدلان سے ماخوز ہے نیز حوزہ نیوز میں بھی ذکر ہوا ہے

Comments (0)

There are no comments posted here yet

Leave your comments

Posting comment as a guest. Sign up or login to your account.
0 Characters
Attachments (0 / 3)
Share Your Location

This e-mail address is being protected from spambots. You need JavaScript enabled to view it.  Etaa

طراحی و پشتیبانی توسط گروه نرم افزاری رسانه