رہبر انقلاب اسلامی نے اسپتال سے نکلتے وقت ایک انٹرویو میں ایرانی قوم ، اعلی شخصیات اور حکام  کے اظہار محبت نیز اسپتال میں معالجہ ٹیم کے ڈاکٹروں کی زحمات پر شکریہ ادا کیا۔
رہبر انقلاب اسلامی نے اس انٹرویو میں علاقہ کے اہم مسائل اور امریکہ کی مداخلت کے بارے میں اہم نکات پیش کئے۔


رہبر انقلاب اسلامی نے داعش کے خلاف امریکی اتحاد کو کھوکھلا، پوچ  اور امریکی مفاد پر مبنی قراردیا اور  اس اتحاد میں ایران کی دعوت کے سلسلے میں امریکی حکام کی رفتار ،مؤقف اور دعوؤں کے بےبنیاد ، جھوٹ اور متضاد ہونے کے بارے میں ٹھوس شواہد کی طرف اشارہ کیا۔
رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: عراق میں داعش کی کمر عراقی عوام اور فوج نے توڑی ہے اور عراق میں داعش کی کمر توڑنے میں امریکہ کا کوئی کردار نہیں ہے بلکہ اس کام کو عراقی عوام اور فوج نے انجام دیا ہے اور خود امریکی اور داعش بھی اس حقیقت کو جانتے ہیں۔
رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: امریکہ داعش کو بہانہ بنا کر عراق اور شام میں بھی پاکستان کی طرح ہر جگہ بمباری کرنا چاہتے ہیں۔
رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: عراق میں جب داعش کا مسئلہ پیش آیا تو امریکیوں نے عراق میں اپنے سفیر کے ذریعہ ایران سے داعش کے خلاف تعاون کی درخواست کی اور میں نے اس درخواست کی مخالفت کی ، کیونکہ امریکیوں کے ہاتھ آلودہ ہیں۔
رہبر معظم انقلاب اسلامی نے فرمایا: امریکی وزیر خارجہ نے ذاتی طور پر ایرانی وزیر خارجہ آقائ ظریف سے تعاون کی درخواست کی جسے ظریف نے رد کردیا
واضح رہے کہ رہبر انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ خامنہ ای کا گزشتہ ہفتے پیر کے روز تہران کے ایک سرکاری ہسپتال میں پروسٹیٹ کا آپریشن کیا گیا جس کے بعد آٹھ دن تک ہسپتال میں آپ کو ڈاکٹروں کے زیر نظر رکھا گیا آپ کا آپریشن الحمد للہ کامیاب رہا اور آپ مکمل صحت و سلامتی کے ساتھ آج اپنے گھر واپس تشریف لے گئے۔

 

 

 

Comments (0)

There are no comments posted here yet

Leave your comments

Posting comment as a guest. Sign up or login to your account.
0 Characters
Attachments (0 / 3)
Share Your Location

This e-mail address is being protected from spambots. You need JavaScript enabled to view it.  Etaa

طراحی و پشتیبانی توسط گروه نرم افزاری رسانه