کل کے اسمبلی اجلاس میں وزیر اعلی نے اس بات کی تصریح کی ہے کہ بلتستان میں عوامی ایکشن کمیٹی کے جلسے میں جن سرکاری ملازمین نے شرکت کی ہے وہ برطرف ہونگے اور اس کی وجہ یہ بیان کی ہے کہ ملازم تو ملازم ہوتا ہے اسے وزیر اعظم, .... اور وزیر اعلی کے خلاف بولنے کا حق نہیں ہے!!!!!
ابھی تک وزیر اعلی یہ نہیں سمجھ پائے کہ سرکار کسے کہتے ہیں اور سرکاری ملازم کسے کہا جاتا ہے!

ستر کے عشرے کے آخر میں پاکستان کے ہمسائے ملک ایران میں امام خمینی کی رہبری میں اسلامی انقلاب آیا تو دنیا بھر سے انقلاب پسند نوجوانوں کو اپنی کشش اور جاذبیت سے کھینچتا چلا گیا۔

 

 

 

مسلم ریاستوں میں خواہ ان کا کردار اسلامی نہ بھی ہو، مگر ان میں لفظ اقلیت کی بڑی ’’اسلامی اور فقہی باریکیوں" سے مزین تشریع کی جاتی ہے۔ آئین و قانون سازی میں اس ایک لفظ اور اس کے اطلاق کے حوالے سے نامور علمائے کرام اور گرامی قدر آئینی و قانونی ماہرین سے رائے لی جاتی ہے، کالم مگر ریاست اور ’’ذمی‘‘ کے حقوق و فرائض کے حوالے سے تو نہیں، البتہ فرقہ وارنہ کشیدگی اور اس کے بطن سے پھوٹنے والے فکری مغالطوں کی پردہ دری ضرور کر رہا ہے۔

 

 

 

قم میں حضرت معصومہ(ع) کا روضہ مشہد ميں حضرت امام رضا (ع) کے روضۂ اقدس کے بعد ایران کا دوسرا بارونق مزار ہے جہاں روزانہ ہزاروں زائرین آپ(ع) کی زیارت کرتے ہيں۔

اسی طرح خارجہ پالیسی کو ناکامی سے بچانے کے لیے بحرین میں بسنے والی شیعہ آبادی کے خلاف ریٹائرڈ فوجیوں کی خدمات سے لے کر بحرینی فورسز کی تربیت کے لیے انسٹرکٹر بھی درکار ہونگے۔ شام کے محاذ پر پاکستانی شدت پسندوں کے ساتھ ساتھ اب اسلحہ بھی درکار ہوگا۔

This e-mail address is being protected from spambots. You need JavaScript enabled to view it.  Etaa

طراحی و پشتیبانی توسط گروه نرم افزاری رسانه