تحریر: سید اسد عباس تقوی
جیو تو ایسے ۔۔۔۔ کہ نہ اپنی عزت سلامت رہے اور نہ کسی دوسرے کی پگڑی۔ کیا دنیا میں جینے کا یہی انداز ہے؟ جیو ٹی وی کی صبح کی نشریات میں کی جانے والی حالیہ گستاخی، جس کے بارے میں ان کا اپنانقطہ نظر یہ ہے کہ گستاخی نادانستہ طور پر ہوئی، پر بحث زوروں پر ہے۔

 

 

 

گذشتہ 20 سال کے دوران متوقع اوسط عمر میں 6 سال کا اضافہ رکارڈ کیا گیا ہے یہ اعداد و شمار ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے اپنی تازہ رپورٹ ورلڈ ہیلتھ اسٹیٹسٹکس میں جاری کیے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں اب لوگ زیادہ لمبے عرصے جی رہے ہیں۔

 

 

 

کل کے اسمبلی اجلاس میں وزیر اعلی نے اس بات کی تصریح کی ہے کہ بلتستان میں عوامی ایکشن کمیٹی کے جلسے میں جن سرکاری ملازمین نے شرکت کی ہے وہ برطرف ہونگے اور اس کی وجہ یہ بیان کی ہے کہ ملازم تو ملازم ہوتا ہے اسے وزیر اعظم, .... اور وزیر اعلی کے خلاف بولنے کا حق نہیں ہے!!!!!
ابھی تک وزیر اعلی یہ نہیں سمجھ پائے کہ سرکار کسے کہتے ہیں اور سرکاری ملازم کسے کہا جاتا ہے!

پاکستان اور ایران نے برے وقتوں میں ایک دوسرے کا ساتھ دیا ہے، وہ 65ء کی جنگ ہو یا 71ء کی، ایران پاکستان کے ساتھ کھڑا تھا، ذوالفقار علی بھٹو کا کہنا تھا کہ سارے خلیجی ممالک مل کر پاکستان کو جتنی امداد دیتے ہیں اس سے کہیں زیادہ اکیلا ایران ، پاکستان کو مدد دیتا ہے،

ستر کے عشرے کے آخر میں پاکستان کے ہمسائے ملک ایران میں امام خمینی کی رہبری میں اسلامی انقلاب آیا تو دنیا بھر سے انقلاب پسند نوجوانوں کو اپنی کشش اور جاذبیت سے کھینچتا چلا گیا۔

This e-mail address is being protected from spambots. You need JavaScript enabled to view it.  Etaa

طراحی و پشتیبانی توسط گروه نرم افزاری رسانه